ZAFFAR DENOUNCES ROUTINE KILLING OF YOUNG BOYS,CONDEMNS IMPOSITION OF RESTRICTIONS

Srinagar 7 Feb: Incarcerated Chairman of Jammu and Kashmir salvation movement Zaffar Akber Bhatt while strongly condemning the killing of four youth's in Shopian said the killings of young boys, have become a routine affair of trigger-happy forces in Kashmir. In a statement, Zaffar said, every alternate day there is a killing of young boys, innocent civilians and forces feel proud in emptying their cartridges on the unarmed and innocent civilians, he said, the people in state are facing worst situations and forces enjoying impunity under the garb of draconian laws like AFSPA.

Zaffar said that by imposing strict curbs, incarcerating and caging pro-freedom leaders and by barring people from march towards Shopian , the government can’t break the resolve of the people of Kashmir, who are committed to achieve their right to self determination and protest the inhumanities inflicted upon them in the course of their just struggle.He strongly condemned the use of force , arrest of resistance leaders and strict restrictions to foil the Shopian Chalo programme of the joint resistance leadership against the unabated killing of civilians, stating that those that flaunt their democratic credentials world over, are scared of getting exposed by the public anger and resentment during protests against their brutalities, 
Spokesman demands immediate release of Zaffar Akber Bhatt, Gazi Javid Baba and other detained Hurriyat leaders and activists.
Meanwhile a delegation of salvation movement comprised of Molvi Mudasir, Adnan Salfi, Ishaq Ahmad, Farooq Ahmad and Imtiyaz Ahmad on Wednesday visited Shopian to express solidarity and sympathy with the bereaved families,
The delegation members paid glowing tributes to slain youths and
assured the bereaved families that whole nation is with them at this time of grief and sorrow,
فورسز کو حاصل خصوصی اختیارات شوپیان جیسے واقعات کی بنیادی و اصل وجہ، ظفر اکبر بٹ۔
مزاحمتی قیادت کے شوپیان چلو کال کو طاقت و قوت کے بل پر ناکام بنانے کی مذمت،
سالویشن مومنٹ وفد شوپیان پہنچنے میں کامیاب۔
7 مارچ سرینگر : سینئر مزاحمتی قائد جموں و کشمیر سالویشن مومنٹ کے محبوس چئیرمین ظفر اکبر بٹ نے شوپیان کے چار معصوم، بے گناہ نوجوانوں کو فورسز کی اندھا دھند فائرنگ کے نتیجے میں جاں بحق کرنے پر فورسز کو ہدف تنقید کا نشانہ بنایا، انہوں نے کہا فورسز کو حاصل خصوصی اختیارات (کالے قوانین ) شوپیان جیسے واقعات و سانحات کی بنیادی و اصل وجہ ہے۔
ظفر اکبر نے شہید نوجوانوں کو پرنم آنکھوں سے خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ان کی قربانیوں نے ہمارے کندھوں پر بھاری ذمہ داریاں ڈال دی ہے اور ہم اس بات کا عزم دہراتے ہے کہ رواں جدوجہد کی منزل کے حصول تک اور شہیدوں کے مقدس و عظیم مشن کےحصول تک ہمارے پرامن جدوجہد جاری رہے گئے۔
ظفر اکبر نے شہرخاص سمیت کشمیر کے متعدد علاقوں میں سخت ترین بندشیں، قدغنیں عائد کرنے پر شدیدردعمل کا اظہار کیا ہے ، انہوں نے پرامن احتجاجی
پروگرام اور شہیدوں کے اہل خانہ سے یکجہتی و تعزیت کے لئے مزاحمتی قیادت کے شوپیان چلو کال کو طاقت و قوت کے بل بوتے پر ناکام بنانے کی پر زور مذمت کی ہے،
سالویشن مومنٹ ترجمان نے ظفر اکبر بٹ سمیت تمام حریت قائدین کی تھانہ و خانہ نظربندی کی زبردست الفاظ میں مذمت کی ہے،ترجمان نے کہا بار بار مزاحمتی قائدین کو نظر بند یا گرفتار کرنا اس بات کی عکاسی کرتی ہے کہ حکومت کس قدر بوکھلاہٹ کی شکار ہیں۔انہوں نے ظفر اکبر بٹ، غازی جاوید بابا سمیت تمام مزاحمتی قائدین کی فوری رہائی کی اپیل کی ہے،
دریں اثناءسالویشن مومنٹ کا ایک اعلٰی سطحی وفد جو مولوی مدثر، عدنان سلفی، امتیاز احمد، اسحاق احمد اور فاروق احمدپر مشتمل تھا آج سخت ترین بندشوں،قدغنوں کے باوجود شوپیان پہنچنے میں کامیاب ہوا ہے ،آس موقعہ پر انہوں نے تعزیتی مجلسوں سے خطاب کرتے ہوئے شہید ہوئے نوجوانوں کو شاندار خراج عقیدت و خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ان شہیدوں کی مقدس و عظیم قربانیوں کو ہم عقیدت کا سلام پیش کرتے ہیں،وفد نے شہید نوجوانوں کے اہل خانہ سے دلی تعزیت، یکجہتی و ہمدردی کا اظہار کیا اور شہید نوجوانوں کے بلند درجات کے لئے فاتحہ بھی پڑھی،