ZAFFAR AKBER CONDEMNS CIVILIAN KILLING , DEMANDS UNCONDITIONAL RELEASE OF PRISONERS AND DETAINED YOUTH

Srinagar 28 April / The Chairman of Jammu and Kashmir salvation movement Zaffar Akber Bhat has strongly condemned the killing of a 21-year-old youth, Shakeeb Shabir from Shopian in the Shootout on Thursday in Anantnag district of south Kashmir, 
Bhat said " “The bloodbath of Kashmiri youth continues unabated under one pretext or another while human rights organizations, civil society, peace activists and humanists in India and outside are observing a criminal silence on it.”Meanwhile, Bhat while paying tributes to slain youth, said, “Kashmiri youth are offering priceless sacrifices for a great cause and their sacrifices are the assets of the Kashmir struggle and it’s the collective responsibility of people and the leadership to safeguard these sacrifices.”“People of Kashmir and the resistance leadership need to remain steadfast to ensure that the mission of martyrs is accomplished,” He said in a statement issued to press .“Instead of resolving Kashmir issue as per the aspirations of people of Kashmir, India has adopted an oppressive and stubborn approach, muzzling genuine voices by use of military might chocking all space for peaceful resistance. As there is no end to continue bloodbath and persecution being inflicted upon the common people especially the youth currently in the form choking political space for peaceful activities , the youth feel frustrated ,”
He said New Delhi can delay the resolution of Kashmir dispute by use of force and military might but cannot deny it. “The resilience and sacrifices of the people will one day make them see the dawn when their dream of achieving the right to self-determination which is the right of every nation and for which they have been yearning for past 70 years, will be realised,
Bhat sb " demanded the unconditional release of all Kashmiri prisoners and Youths lodged in various prisons within the State and outside.
He stated that it was highly regrettable that instead of releasing the Kashmiri prisoners and youths Authorities prolonging detention of Youths and political Activits he said "

ظفر اکبر نے طالب علم کی ہلاکت پر شدید ردعمل کا اظہار کیا، 
دہلی کی پالیسی دھونس و دباو¿ اور تشدد پر مبنی، 
اسیروں و محبوسین کی حالت زار پر گہرے تشویش ظاہر کی اور فوری رہائی کی مانگ کی، 
سرینگر 28 اپریل /سینئر مزاحمتی قائد، جموں و کشمیر سالویشن مومنٹ چئیرمین ظفر اکبر بٹ نے ثاقب شبیر نامی طالب علم کی ہلاکت پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے اور اس کی پر زور الفاظوں میں مذمت کی ہے،اخبارات کے لئے جاری بیان کے مطابق جموں و کشمیر سالویشن مومنٹ چئیرمین ظفر اکبر بٹ نے انت ناگ میں ایک معصوم، بےگناہ طالب علم ثاقب شبیر جو کہ ضلع شوپیان سے تعلق رکھتے تھے کی ہلاکت پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے،انہوں نے معصوم طالب علم ثاقب شبیر کی ہلاکت کو انتہائی دردناک و تکلیف دہ قرار دیکر اس کی پر زور الفاظوں میں مذمت کی ہے، ،بٹ صاحب نے کہا ہمارے نونہالوں،متوالوں،جذبہ حریت سے سرشار سرفرشوں اور معصوم بچوں کے جنازے دیکھ ہر کوئی انسان خون کے آنسو رو رہا ہے، 
انہوں نے سوالیہ انداز میں کہا اگر کب تک ہمارے نونہالوں، جگر گوشوں اور ہمت و حوصلہ سے سرشار پھول جیسے بچوں کے جنازے ہمارے ماوں اور بہنوں کو دیکھنے پڑھے گئے ،
بٹ نے کہا دھونس دباو¿، پر آشوب و نامسائد حالات سے اگرچہ مسئلہ کشمیر کےحل میں طول دیا جاسکھتا ہے تاہم اس کے دائمی و حتمی فیصلہ و حل کو تشدد، ماردھاڑ دھونس و دباو¿ اور تشدد پر مبنی پالیسی سے ہرگز حل نہیں کیا جا سکتا ہے، 
انہوں نے کہا نئی دہلی کی تازہ و جاری تشدد پر مبنی پالیسی نے یہاں کے پر امن نوجوانوں میں ایک تذبذب و بےچینی کی سی صورتحال پیدا کی ہے، انہوں نے کہا ایک منصوبہ بند طریقہ و مکروہ عزائم کے تحت نوجوانوں کو پرامن سیاسی سرگرمیوں سے جبری روکا جارہا ہے ،انہوں نے نئی دہلی اور اسلام آباد کی سیاسی قیادت کو افہام و تفہیم سے تمام مسائل حل کرنے کی مخلصانہ اپیل کی ہے تاکہ کشمیر میں جاری قتل و غارت گری کا سلسلہ فوری طور بند ہو اور یہاں کی عوام امن و امان اور چین و سکون سے زندگی گزار بسر کرے۔
بٹ صاحب نے کشمیر اور کشمیر سے باہر مختلف جیلوں میں اسیروں،محبوسین اور گرفتار شدہ نوجوانوں کی حالت زار پر گہرے تشویش ظاہر کی ہے، انہوں نے کہا مختلف جیلوں میں قید و بند کی صحبتیں وسعت قلبی اور ایثار و قربانی سے برداشت کرنے والے متعدد نظربندوں کی بگڑتی صحت کے باوجود مسلسل نظر بندی قابل مذمت ہے،انہوں نے تمام نظر بندوں اور گرفتار شدہ نوجوانوں کی فوری بلا مشروط رہائی کی مانگ کی ہے۔