Salvation Movement Condemns Zaffer Bhat's House Detention, Expresses concern our meted , plight of inmate's, urged New Delhi' to start dialogue

Srinagar, Oct 9 : A heavy contingent of police raided the Bagh I Mehtab residence of senior Hurriyat leader and The Jammu and Kashmir Salvation Movement (JKSM ) Chairman Zaffer Akber Bhat On Sunday  and placed the party Chairman under house confinement, Salvation Movement strongly condemns the house arrest of their party chairman termed the house detention as coercive , Arbitrary tactic and a highly deplorable Move.

The  spokesman also condemned the fresh arrest spree launched across the Kashmir valley, He  said whenever election drama is enacted in Kashmir, it brings endless miseries and suffering for the  common people,  while condemning  the  arrest spree , massive crackdown  on the resistance leadership he said  we are indebted to safeguard the sacrifices of our martyrs who laid down there blood for the betterment of our future.  Spokesman expresses his concern our the deteriorating health conditions of inmate's, prisoners and detainees in different prisons of Indian Jails and demand's release of All arrested youth's and prisoners. 

Spokesman  said New Delhi's  iron fist policy will not stand for long,He urged New Delhi' to start dialogue and end confrontation with neighbouring state ,He said " New Delhi' must take bold steps to stop  bloodshed in Kashmir.

ظفر اکبر کی خانہ نظربندی پر پارٹی کا شدید ردعمل،تازہ گرفتاریوں ، نظربندوں کی رہائی کا مطالبہ کیا ،نئی دہلی کی سیاسی قیادت کو مئسلہ کشمیر کے خاطر مذاکرات شروع کرنے کا مشورہ،

سرینگر 09 اکتوبر/سینئر مزاحمتی قائد، جموں و کشمیر سالویشن مومنٹ چیرمین ظفر اکبر بٹ کی رہائش گاہ پر پولیس کی ایک بھاری جمعیت نے چھاپہ ڈالا اور موصوف کو خانہ نظر  کیا،پارٹی  ترجمان نے چیرمین ظفر اکبر بٹ کی خانہ نظربندی کو فسطائی ذہنیت اور انتظامیہ کی بوکھلاہٹ سے تعبیر کیا ہے،

انہوں نے کہا ایک طرف نام نہاد بلدیاتی انتخابات کا  عمل شروع ہوا ہے  اور دوسری طرف ہمارے نونہالوں،  جگر پاروں، معصوم بچوں کو رات کی تاریکی میں گرفتار کیا جا رہا ہے جوکہ انتہائی درد ناک و تکلیف دہ آمر ہیں،

انہوں نے وادی کشمیر میں تازہ گرفتاریوں پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا جمہوری مزاج میں ہر کسی نظریات کو پرامن طور و طریقہ سے اپنی بات کی آزادی ہوتی ہیں تاہم یہاں اس کے برعکس ہے،

ترجمان نے جیلوں میں   نظربندوں،  اسیروں و سیاسی قیدیوں کی حالت زار پر گہرے تشویش ظاہر کی ہے،

انہوں نے تمام گرفتار شدہ نوجوانوں اور نظربندوں کی رہائی کا مطالبہ کیا ہے،

ترجمان نے نئی دہلی کی طاقت و قوت پر مبنی پالیسی کو جمہوری اصولوں کے منافی قرار دیا،

انہوں نے نئی دہلی کی سیاسی قیادت کو مئسلہ کشمیر کے منصفانہ آور حتمی فیصلہ و حل کے خاطر مذاکراتی عمل شروع کرنا کا مشورہ دیتے ہوئے کہا اس مئسلہ کو فوری طور حل کرنے کے خاطر اقدامات اٹھائے تاکہ مزید انسانی جانوں کا ضیاع نہ ہو اور امن و امان کا ماحول قائم ہو۔