Salvation movement condemns Zaffar Akber’s continuous detention, Terms it as ‘a policy of political revenge’

Srinagar 12 April : Salvation movement  strongly condemned the continuous house detention of its Chairman Zaffar Akber Bhat, who has been prevented to carry out his political and  social Activities , the Salvation movement  spokesman termed the Authoritie’s decision to keep Bhat  forcibly confined to his house as a policy of political revenge and harassment. In a statement issued to press , Spokesman said that the shameful and dictatorial decision of the Authorities  of caging the Bhat from 31st March continously   for long period of time ,is completely A political vendetta and frustration of Authorities,Spokesman said 

to stop Bhat from representing the aspirations of the  people of Kashmir and raising his voice against Civilian Killings, unleashing unprecedented oppression in the form of killings of innocents, maiming and blinding civilians incarceration torture and all kinds of atrocities to inflict pain to the people of Kashmir ,while such a situation festers on ground and resistance leaders continues to remain caged in their own homes or jails,

salvation movement spokesman appreciate the people of Kashmir for observing complete strike against Civilian Killings of south Kashmir’s kulgam district, 

Meanwhile on the directions of Chairman Akber Bhat Salvation movement delegation comprised of Imtiyaz ahmed, farooq ahmed And Zubair ahmed visited Mishpora Kulgam participated in funeral of yesterday's slain Civilian and later visited  residence , offer heartfelt condolences and express solidarity with his  family members.

Spokesman demands immediate release of Akber Bhat, senior leader Gazi Javid Baba, Party Activists and Youths.

[3:00 PM, 4/12/2018] Zafar Akbar: سالویشن مومنٹ نے  ظفر اکبر کی مسلسل حراست پر شدید برہمی کا اظہار کیا ، 

نئی دہلی کی طاقت پر مبنی  پالیسی قابل مذمت ، 

وفد کی کلگام میں شہیدوں کے لواحقین سے اظہار   یکجہتی ، 

12 مارچ سرینگر /

سالویشن مومنٹ ترجمان نے سینئر مزاحمتی قائد، جموں و کشمیر سالویشن مومنٹ کے نظر بند چئیرمین ظفر اکبر بٹ کی 31 مارچ سے مسلسل  حراست کی پر زور الفاظوں میں مذمت کی ہے،اخبارات کے لئے جاری بیان کے مطابق سالویشن مومنٹ ترجمان نے چئیرمین  اکبر بٹ کی 31 مارچ سے مسلسل حراست کی مذمت کرتے ہوئے کہا ایک منصوبہ بند طریقہ سے ان کو سیاسی و سماجی سرگرمیوں سے جبری روکا

 جارہا ہے تاکہ وہ کشمیری عوام کے جذبات و احساسات کی ترجمانی سے باز رہے اور عام لوگوں کی ہلاکتوں کے خلاف احتجاجی مظاہروں سے دور رہیے

انہوں نے کہا ایک طرف سے معصوم و بےگناہ نوجوانوں کی ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے اور دوسری طرف سے حریت قائدین کو تھانہ یا خانہ نظربند کر کے شہیدوں کے لواحقین سے اظہار یکجہتی کی بھی اجازت نہیں دی جا رہے ہیں، 

جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے اور ہم انتظامیہ کے اس رویہ کی سخت الفاظوں میں مذمت کرتے ہیں ،ترجمان نے کہا فورسز  کی پرامن احتجاجی مظاہروں پر اندھا دھند فائرنگ سے پتہ چلتا ہے کہ نئی دہلی  کی پالیسی طاقت و تشدد پر مبنی ہے  ،انہوں نے کہا برِصغیر میں پرامن ماحول، امن و امان، لوگوں کو خوشحال زندگی تب تک میسر نہیں ہوسکتی جب تک نہ مسئلہ کشمیر کے دائمی و حتمی فیصلہ نہ ہو، 

انہوں نے وادی کشمیر کے متعدد علاقوں میں مظاہرین پر زیادتیوں کی مذمت کی ہے، 

ترجمان نے کشمیری عوام کی تمام طرح کی  کاروباری سرگرمیوں کو معطل کرکے کلگام ہلاکتوں کے خلاف پرامن خاموش احتجاج کی سرہنا  کرتے ہوئے کہا اس سے نئی دہلی کو اس بات کا اندازہ و ادراک ہونا چاہیے کہ رواں تحریک مزاحمت یہاں کے لوگوں میں کس قدر پیوست ہے ۔

دریں اثناء سالویشن مومنٹ چئیرمین ظفر اکبر بٹ کی ہدایت پر سالویشن مومنٹ کا ایک اعلٰی سطحی وفد جو امتیاز احمد، فاروق احمد اور ظبیرر احمد پر مشتمل تھا نے کل کلگام میں  شہید ہوئے نوجوانوں کی نماز جنازہ میں شرکت کی اور بعد میں ان کے گھر گئے ، جہاں پر انہوں نے شہیدوں کو شاندار خراج عقیدت و خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہمارے پاس نوجوانوں کی  قربانیوں کی ایک درخشاں تاریخ ، و اثاثہ ہیں  جو اس بات کی گواہی دے رہے ہے کہ کشمیری عوام رواں جدوجہد سے دستبردار نہیں ہو سکھتی ،انہوں نے شہیدوں کے لواحقین سے تعزیت پرسی اور یکجہتی کا بھی 

اظہار کیا ،

دریں اثناء سالویشن مومنٹ ترجمان نے چئیرمین  اکبر بٹ، سینئر پارٹی لیڈر غازی جاوید بابا، ورکنان اور کشمیر کے مختلف علاقوں میں گرفتار نوجوانوں   

 کی فوری رہائی کی مانگ کی ہے ۔