Released from house detention, Zaffer Bhat visits several areas under mass contact program, Salvation Movement Chairman concerned over prisoners’ plight, demand's release of detainees.

Srinagar 28 Jan :Soon after his release from house detention, Chairman of Jammu and Kashmir salvation Movement (JKSM)
 Zaffer Akber Bhat  on Monday visited several areas including Hyderpora,PeerBagh and Gulwanpora under party's Mass contact program.
While Addressing people Zaffer  said, “Kashmir is in the grip of forcible control and our  youth's are dedicating lives  on the path of defending truth and seeking justice for their  people.”He said unless Kashmir dispute is resolved in its historic perspective, based on fundamental principles of democracy, and not diluted and suppressed through military might and no peace in the region could be achieved and it will continue to pose a major threat for the entire South Asia.
He suggested to GoI to understand the realities on ground and people’s overwhelming sentiment and initiate a process of conflict resolution rather than maintaining the “oppressive” status quo.
Meanwhile Zaffer Bhat said that the information received from jails regarding the plight of detainees is deeply disturbing and a matter of serious concern for  the people of Kashmir,
He said that the ” treatment meted out to Kashmiri detainees and political prisoners lodged particularly in Jammu jails right from the time they enter these Jails deliberately inhuman
and demands immediate release of political  prisoners and all Arrested youth's.
[28/01, 4:17 pm] ظفر بٹ کی  نظربندی سے رہائی،متعدد علاقوں میں عوامی رابطہ مہم کے تحت خطاب کیا،
سالویشن مومنٹ چیرمین نے نئی دہلی کی سیاسی قیادت کو مئسلہ کشمیر کی تاریخی حیثیت اور زمینی حقائق کو تسلیم کرکے مذاکراتی عمل شروع کرنے کا مشورہ دیا ۔
سرینگر 28 جنوری/ 
سنئیر مزاحمتی قائد،جموں و کشمیر سالویشن مومنٹ چیرمین ظفر اکبر بٹ نے نظربندی سے رہائی ملتے ہی حیدرپورہ، پیر باغ اور گلوپورہ علاقے میں عوامی رابطہ مہم کے تحت لوگوں سے خطاب کیا،
اپنے مدلیل تقریر میں ظفر بٹ نے وادی کشمیر کی پراشوب و مخدوش سیاسی صورتحال اور حالات پر مفصل روشنی ڈالی،
ظفر نے نئی دہلی کی سیاسی قیادت سے  کہا ہے کہ  اپ مئسلہ  کشمیر کی  تاریخی حیثیت کو ہرگز نظر انداز نہیں کرسکھتے ہیں ،
آپ نے جو وعدے یہاں کی عوام کے ساتھ کیا ہے اب ان  کو عملی جامہ پہنانے کا وقت آچکا ہے،
انہوں نے کہا جب تک نہ  مئسلہ کشمیر کو اس کی تاریخی حیثیت،جمہوری اصولوں اور انسانیت کے دائرے میں حل کیا جاسکتاہے تب تک نہ ہی طاقت و قوت پر مبنی پالیسی کامیاب ہو سکتی ہیں اور نہ ہی جنوبی ایشائی خطہ میں قیام امن کا خواب شرمندہ تعبیر ہوسکتا ہے بلکہ تب تک خطہ کی آبادی کو شدید خطرہ لاحق ہے،
ظفر نے  حکومت ہند کو مخاطب کرتے ہوئے کہا اپ کو یہاں کےزمینی حقائق ،لوگوں کے جذبات اور امنگوں کو تسلیم کر کے اس دیرینہ تنازعہ کے حل کے لئے کوششیں شروع کرنے چاہیے نہ کہ جوں کی توں پالیسی کو برقرار رکھنا چاہیے،
دریں اثناء سالویشن مومنٹ چیرمین ظفر اکبر بٹ نے نظربندوں کی حالت زار پر گہرے تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا جو خبریں کشمیر کے باہر   جیلوں سے آو رہی ہیں وہ انتہائی درد ناک و تکلیف دہ ہیں،
کیونکہ انتہائی خراب طبیعت کے  باوجود ان کی نظربندی  مسلسل جاری ہے،جوکہ انسانی و جمہوری اقدار کے منافی ہیں ،
انہوں نے نظربندوں کی فوری رہائی کا مطالبہ دہراتے ہوئے کہا ان سیاسی قائدین کے بھی کچھ حقوق ہیں  جن کو مدنظر رکھ کر ان کو  بنیادی ضروریات فراہم کرنی چاہیے۔