ین الاقوامی تنظیموں اورحقوق انسانی سے متعلق اداروں سے اپیل کہ وہ فوجی انخلاءاور کالے قوانین کے خاتمے کے لئے اپنا اثرو رسوخ استعمال کریں

 PRESS RELEASESrinagar, August 31: Strongly condemning the government forces for targeting militants families, Jammu Kashmir Salvation Movement Chairman Zaffar Akbar Bhat said that victimizing or arresting relatives of pro-freedom activists will prove counterproductive. Zaffar asked state authorities to desist from these cowardice acts as militant families are not connected with activities of their militant relatives. A well-thought-out ploy is being hatched in state to involve society in civil clashes, said he.

He strongly condemned vandalizing properties and thrashing of youth in Muran Pulwama, saying some underhand sources are adding fuel to fire and people in nook and corner of state are being subjected extreme situations.

He expressed his deep anguish over setting ablaze the residential house of Jaish militant Sha Jahan Sofi in Amshipora Shopian and expressed sympathies with effected family. Meanwhile on the direction of Zaffar Akbar Bhat a deputation led by Mudasir Ahmad Qadiri visited Amshipora and expressed his sympathies with family of Jaish militant.

Zaffar Akbar in his statement while reiterating his pledge to follow the freedom movement, said that through these cowardice acts people of state won’t budge or succumb to pressure tactics and instead will follow their cherished goal till the dawn of freedom sets in. We appeal international community for their cognizance and seek their interference for end to human rights violations, withdrawal of troops and repeal all draconian laws.

پریس ریلیز

 سرینگر اگست31 : جموں کشمیر سالویشن مومنٹ کے چیرمین ظفر اکبر بٹ نے عسکریت پسند نوجوانوں کے اہل خانہ کے خلاف پولیس اور فورسز کی جانب سے ستائے جانے اور انہیں تشدد کا نشانہ بنانے پر اپنے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جان بوجھ کر ایک ایسی فضا قائم کی جارہی ہے جس سے قتل و غارت گری کا بہانہ ہاتھ آئے ۔ اس طرح کی صورت حال کو جنم دینے والے وادی کو آپسی رسہ کشی اور خانہ جنگی کی بٹھی میں جھونکنا چاہتے ہیں ۔انھوں نے اپنے بیان میں حکمران طبقے کو مورد الزام ٹھراتے ہوئے کہا کہ کسی ملٹنٹ کی ذاتی کاروائی کے خلاف اس کے اہل خانہ کو ستانے کے لئے ان کے پاس کیا جواز ہے اور اس طرح کی فضا قائم کرنے والے یہ کیوں نہیں سوچتے کہ قتل غارت گری کے اس چکر کو شروع کرکے وہ کیا کچھ حاصل کرنا چاہتے ہیں ۔ظفر اکبر بٹ نے اپنے بیان میں مُرن پلوامہ میں سول آبادی پر قہر ڈھانے ، لوگوں کی مارپیٹ کرنے اور مکانوں اور اسباب خانہ کو تہس نہس کرنے کی کاروائیوں پر زبردست تشویش اور غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وادی کے قریہ قریہ میں اس طرح کی دہشت ناک کاروایاں کرکے لوگوں کو پس از دیوار کیا جارہا ہے ۔

اپنے بیان میں انھوں نے امشی پورہ شوپیان میں جیش محمد کے عسکریت پسند شاہ جہاں صوفی کے گھر کو نزر آتش کرنے کی کاروائی کو وحشیانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ جو فورسز ان کاروائیوں میں ملوث ہیں ،وہ سماج ایک سوچے سمجھے منصوبہ کے تحت انتقام گیری کی جانب دھکیل رہے ہیں۔ 

ادھر ظفر اکبر بٹ کی ہدایت پر ایک وفد جس کی قیادت مدثر احمد قادری کررہے تھے ،نے امشی پورہ جاکر شاہ جہاں صوفی کے اہل خانہ کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا۔ظفر اکبر بٹ نے اپنے بیان میں وادی کے قریہ قریہ سے ملی اطلاعات پر اپنے غم اور دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نہتے عوام کے خلاف ایک جنگ چھیڑدی گئی ہے اور اس بات کا اعادہ کیا کہ اس طرح کی انسان سوز اور غیر اخلاقی کاروائیوں سے ریاستی عوام کو نہ ہی مرعوب کیا جاسکتا ہے اور نہ انہیں پشت بہ دیوار کرکے مسئلہ کشمیر کے سلسلے میں من مانی کی جاسکتی ہے ۔ظفر اکبر بٹ نے اپنے بیان میں بین الاقوامی تنظیموں اورحقوق انسانی سے متعلق اداروں سے اپیل کی کہ وہ ریاست میں ہورہی حقوق انسانی کی پامالیوں کا سنجیدہ نوٹس لیں اور ریاست سے فوجی انخلاءاور کالے قوانین کے خاتمے کے لئے اپنا اثرو رسوخ استعمال کریں