کشمیری خواتین کے قتل کی شدید مذمت ۔۔ظفر اکبر بٹ

 

سرینگر31مئی۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنما اور سالوشن مومنٹ کے سربراہ ظفر اکبر بٹ نے بھارتی فوجیوں کی طرف سے شوپیاں میں دو خواتین کی بے حرمتی اور قتل کی شدید مذمت کی ہے اور لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ واقعے کے خلاف پر امن مظاہرے کریںظفر اکبر بٹنے سرینگر میں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ بے گناہ کشمیریوں پر بھارتی فوجی مظالم کی انتہاءہے اور اس واقعہ کی آزادانہ، غیر جانبدارانہ اور شفاف تحقیقات کیلئے عدالتی کمیشن قائم کیا جانا چاہیے

۔انھوںنے کہاکہ جب تک مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجی موجود رہیں گے اس طرح کے واقعات رونماءہوتے رہیںگے۔ احتجاجی مظاہرون سے عالمی برادری کو یہ پیغام دیا جاسکے کہ کشمیری مسئلہ کشمیر حل نہ ہونے کی وجہ سے بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں مسلسل انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزیوں کا نشانہ بن رہے ہیں۔ انھوںنے کہاکہ لوگ خون کی ہولی سے اب بیزار ہو چکے ہیں اور اس سلسلے کو بند کر دیا جانا چاہیے۔
ٍٍٍٍٍٍ جمعے کے روزظفر اکبر بٹ کو کرالہ پورہ میں تنظیم کے دیگر کارکنوں کے ہمراہ گرفتار کر لیا گیا۔وہ واتھورہ میں ایک ریلی سے خطاب کرنے کے بعد سرینگر کی طرف ایک جلوس کے ساتھ پیش قدمی کررہے تھے۔اپنے بیان میں ان کا کہنا تھا انسان حقوق کی پامالیوں ،فورسز کے بےتحاشہ استعمال اور نہتے کشمیریوں پر فورسز کے ظلم و جبر اور زیادتی کی زبردست الفاظ میں مذمت کی۔ان کا کہنا تھا کہ جب تک وادی سے جب تک کالے قوانین اور انسان حقوق پامالیوں کا خاتمہ نہیں ہوتا تب تک کوئی بھی بات چیت کا عمل لاحاصل ہیں