نہتے کشمیریوں پر فورسز کے ظلم و جبر اور زیادتی کی زبردست الفاظ میں مذمت

 
 - Srinagar-Dated:-29/05/09 کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما و چیرمین سالویشن مومنٹ ظفر اکبر بٹ کو آج اس وقت کرالہ پورہ میں تنظیم کے دیگر کارکنوں سمیت گرفتار کیا گیا جب وہ واتھورہ چوک میں مطاہرین کو خطاب کرنے کے بعد ریلی کی صورت میں سرینگر کی طرف آرہے تھے ۔ واتھورہ میں مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے انسانی حقوق کی پامالیوں ،فورسز کے بے تحاشہ استعمال اور نہتے کشمیریوں پر فورسز کے ظلم و جبر اور زیادتی کی زبردست الفاظ میں مذمت کی۔
 خطاب میں انہوں نے کہا کہ کالے قوانین اور دیگر انسانی حقوق کی پامالیوں کا جب تک خاتمہ نہ ہو تب تک مسئلہ کشمیر پر کسی بھی سطح پر گفت و شنید کرنا ایک لاحاصل عمل ہے ۔ تنظیم کے اعلیٰ ترجمان نے ظفر اکبر بٹ کی گرفتاری کی پر زور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس کو سرکار کی بوکھلاہٹ سے تعبیر کیا۔ اس سے پہلے پروگرام کے مطابق ظفر اکبر بٹ نے جامع مسجد واتھورہ چاڈورہ میں خطبہ جمعہ کے دوران مسلمانوں کو اسوہ حسنہ کو اپنی زندگی میں مکمل طور عملانے پر زور دیتے ہوئے خبردار کیا کہ قیامت کے دن ہر ایک مسلمان کو اپنے منصب کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریوں کے بارے میں پوچھ ہوگی۔اس دن ایک بادشاہ سے لیکر نوکر تک سبھی کو اپنی ذمہ داریوں کا حساب دینا ہوگا کہ آیا انہوں نے اپنی ذمہ داریوں کو خوش اسلوبی اور انصاف کے ساتھ انجام دیا یا پھر خواہشات نفس ،شیطان اور دنیا کے پیچھے اپنی عمر صرف کردی ۔حال ہی میں پیش آئے واقعات جن میں رومانہ جاوید ساکنہ باغ مہتاب اور اس سے پہلے ایک اور لڑکی ساکنہ حیدر پورہ کا آورہ گرد لڑکوں کے ہاتھوں جانبحق ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے ان آوارہ گردی اور بے راہ روی کے واقعات کو پورے کشمیری سماج کیلئے ایک لمحہ فکریہ قرار دیا ۔سماج میں پنپ رہی بے راہ روی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے اپنا تعاون پیش کرتے ہوئے انہوں نے تمام دینی اور سماجی تنظیموں کے ساتھ ساتھ علماء،دانشور طبقہ ،اساتذہ اور بچوں کے والدین کو آگے آنے پر زور دیا تاکہ بے راہ روی کی وباءکو سماج میں پنپنے سے روکا جائے ۔ بٹوارہ میں فورسز گاڑی کی زد میں آکر طالب علم کی شہادت جو پچھلے چند دنوں سے ایسا تیسرا سانحہ ہے پر گہر ے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے لواحقین کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا اور فورسز کی اس طرح کی کشمیری نسل کشی کی پالیسی پر قدغن لگانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے ظفر اکبر بٹ نے اس طرح کی فورسز کاروائی پر زور دار الفاظ میں مذمت کی اور گہری تشویش کا اظہار کیا ۔
 انہوں نے مذید کہا کہ سیاح ہمارے مہمان ہیں اور مہمان نوازی کرنا ہماری صدیوں سے چلی آرہی کشمیری روایت کا اہم حصہ ہے ۔سیاحوں کی آمد کا استقبال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیاحت کو کشمیری معیشیت میں ریڈھ کی ہڈی کا درجہ حاصل ہے ۔اسی طرح سالہا سال سے امرناتھ یاترا کا خوش اسلوبی سے انجام پانا کشمیریوں کی مذہبی رواداری کا ایک قابل تعریف جز ہے۔  دریں اثناء ظفر اکبر بٹ سابقہ ڈپٹی کمشنر عبدالسلام بٹ کی وفات پر اُن کے لواحقین کے ساتھ تعزیت پرسی کرنے کیلئے اُن کے آبائی گھر واقع سنعت نگر تشریف لے گئے۔ مرحوم نہایت ہی ملنسار اور شریف النفس شخصیت کے مالک تھے ۔

            شعبہ نشر واشاعت                سا لویشن مومنٹ
VISIT US AT WWW.JKSM.ORG                  
WWW.SOLVATIONMOVEMENT.BLOGSPOT.COM          
e.mail.zaffarjksm@rediffmail.com and jksmrediffmail.com