، کشمیریوں کو حق خودارادیت دیا جائے

 کراچی ()وکلا نے ہمیشہ تحریک کشمیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا،کراچی نے کشمیریوں کو پناہ دی ،کشمیری تحریک تکمیل کشمیر کی جنگ لڑرہے ہیں،ان خیالات کا اظہار کراچی بار کونسل میں ممتاز حریت پسند کشمیری رہنما الطاف احمد بٹ، تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر راجہ فہیم کیانی نے وکلاکے ایک بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،اس موقع پہ ایڈوکیٹ منیر ملک صدر کراچی بار،جوائینٹ سیکرٹری ندیم  منگی،سردار عظیم،ایڈوکیٹ سردار صغیر ،شفیق بٹ،عقیل ترین ،نصیر عباسی ایڈووکیٹ،جماعت اسلامی آزاد کشمیر کے نائب امیر راجہ جہانگیر  بھی موجود تھے ،صدر کراچی بار منیر ملک نے کہا کہ جہاں کشمیر کا خون بہتا ہے وہاں پاکستان  میں ماتم ہوتا ہے ،الطاف بٹ ،فہم کیانی نے عملی کام کیا،الطاف بٹ بھارتی افواج کی ساتھ لڑے،فہیم کیانی نے برطانیہ میں بڑے احتجاجی  اجتماع کرکے مسئلہ کشمیر اجاگر کیا،کراچی کے وکلا نے ہمیشہ تحریک کشمیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا،کراچی  کشمیریوں کی آواز بنا   ،کشمیری تحریک تکمیل کشمیر کی جنگ لڑرہے ہیں ،سندھ دھرتی مہمان نوازوں کی دھرتی ہے ،ہم نے کشمیر کو شہ رگ کہا،اسکا عملی مظاہرہ کیا،یوم کشمیر پہ ہم نے جنرل باڈی میٹنگ کی ،ہم نے قراداد پاس کی جو اقوام متحدہ کو بھیجی گئی،ہم ملک گیر کشمیر کنونشن کررہے ہیں ،ہم کشمیر کاز سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے،کشمیر ایشو پاکستان اور ہم سب کا مسئلہ ہے، کشمیریوں کو حق خودارادیت دیا جائے، تاکہ وہ اپنی مرضی سے فیصلہ کرسکیں،اس موقع پہ ممتاز حریت پسند رہنما اور جموں و کشمیر سالویشن موومنٹ کے صدر  الطاف احمد بٹ نے کہا کہ یہاں آنے کا مقصد کشمیر کیلئے بیداری ہے،کراچی سمیت ملک کے وکلا حضرات اگر مقبوضہ کشمیر کی ماوں بہنوں کی آواز بنیں تو انقلاب آسکتا ہے،چند سو وکلا جب اٹھیں تو وہ لاکھوں بن جاتے ہیں، فہیم کیانی سینئر کشمیری قیادت کی صحبت میں نکھرے،میں خود بھارتی فوج سے لڑا، صرف جہادفی سیف آزادی کیلئے کافی نہیں، سفارتکاری بھی اہم ہے ،فہیم کیانی کے دل میں کشمیر کا درد پیدا ہوا،جس درد کا احساس 18 ماہ کی ہبہ جان،آسیہ اندرابی کو ہے ،ہم امن اور انصاف کیلئے لڑتے ہیں،میرا مطالبہ یہ ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی ماوں بہنوں پہ ظلم کیخلاف آواز اٹھائیں، بھارتی وکلا اور ججز نے افضل گرو کو صرف اس لئے پھانسی پر چڑھایا کیونکہ انکو بھارتی جج نے بھارتی قوم کی آواز سمجھا،اس پہ پاکستانی وکلا کو اس ظلم پہ آواز اٹھانی چاہئے تھی،الطاف بٹ نے کہا کہ  پاکستانی قوم کو میں آسیہ اندرابی،وہ گیلانی، میر واعظ عمر فاروق،شبیر شاہ، یاسین ملک اور ظفر اکبر بٹ کی طرف سے سلام پیش کرتا ہوں کہ انہو ں نے کشمیر کیلئے اپنے سے کئی بڑی قوت سے ٹکر لی،جس انداز میں ہم قربانیاں دے رہے،جس طرح بھارت تحریک کو دبانے کی کوشش کررہا اسی طرح پاکستان کو بھی آزادی کی منزل حاصل کرنے کیلئے کام کرنا ہوگا،دنیا نکلتی ہے ،کشمیر میں نکلتے ہیں یہاں خاموشی چھا جاتی ہے-پاکستان کا بیانیہ قائد اعظم محمد علی جناح کے بیانیہ کے مطابق ھونا چاہئے-دُنیاں ھمیں کہتی ہے مذاکرات کے ذریعے مسلہ کو حل کریں-سو سے زیادہ مذاکرات کے ادوار ھوچکی ہیں-مذاکرات سمیت سب نسجے آزما چکے ہیں، مسئلہ کشمیر کے حل میں بنیادی رکاوٹ بھارت کی ہٹ دھرمی ہے-جو اپنے دستخطوں سے پیش کی گئی قرارداد پہ عمل نہیں ہونے دے رہا،کشمیر میں کسی کا باپ کسی کا بیٹا شہید ہوگیا-دنیا میں کشمیریوں جیسی بہادری کی مثال نہی ملتی-کراچی سے سرینگر تک ہم ایک ہیں، 5 فروری کی طرح پاکستان کے وکلاء ایک دن کشمیر سے اظہار یکجہتی کرکے انسانی چین بنائیں اور انصاف مانگیں، نریندر مودی کے ظلم کے خلاف عالمی انصاف عدالت میں کیس دائر کریں- مودی کو عالمی عدالت کی کٹہرے میں طلب کریں-دلائیںل دیکر مودی کو دُنیاں کا دہشت گرد ثابت کریں-کشمیر کی ماوں بہنوں کی نظریں 5 اگست کے بعد پاکستان  پہ ہیں، ہم مشکور ہیں پاکستان ہماری پشت پہ ہے ،5 اگست سے پہلے تو بھارت نے پاکستان کی شہہ رگ پر قبضہ کیا تھا، اب مودی نے پاکستان کی شہ رگ پہ پاوں رکھا ،جو ہمارا دعویٰ ہے کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے ،یہ پاکستان کی بقا بھی ہے،الطاف بٹ نے کہاکہ  کشمیرکے 5 لاکھ لوگوں کا خون پاکستان  کی بنیادوں میں ہے ،یہ نفرت اور محبت کی جنگ ہے ،جنگ سے پہلے بہت سارے اقدامات کرنے ھوتے ہیں کیا وہ ہورہے؟ کیا وکلاء تاجر اور دوسرے شعبوں سے وابستہ لوگ کررہے،؟ ہم بھارت کے کسی آرٹیکل کوپہلے بھی نہیں مانتے تھے ،اب توپانچ اگست کے بعد مودی نے تمام معاہدے ختم کئے اب بھارت 100 فیصد کشمیر پہ جبری قابض ثابت ھوگیا ہے ،ہم کس کے انتظار میں ہیں، کشمیری کبھی بھی بھارت کیساتھ نہیں رہینگے ،ہم اگر آج کشمیریوں کا ریسکیو نہیں کریں گے تو کشمیریوں کا تہہ تیغ ھوگا-لوگ مارے جائیں گے، آج اگر آپ ریسکیو نہیں کرینگے تو تباہی ہوگی،پانی کی جنگ ھونی ہیہے-اس سے بچنا مشکل ہے،جموں کشمیر پاکستان کیلئے لائف لائن ہے-اگر پاکستانی فوج یہاں سے جانے کا اعلان کرے تو کشمیر کہی مائیں بہنیں بچے بوڑھے جوان بھارتی فوج کو ڈنڈوں سے مار کر بھگا دینگے، بھارت نے جنگی جنون بھرپا کیا ھوا ہے ھمیں بھی عوام میں جنون پیدا کرنا ھوگا-تب ہی کشمیر کا مسئلہ حل ہوگا اور تب ہی تھرڈ پارٹی ثالثی کرانے پہ مجبور ہوگی، دنیا میں خاص کر برطانیہ یورپ میں فہیم کیانی جیسے لوگوں نے کشمیر کا فلیش پوائنٹ بنا رکھا ہے ،مودی کو اسی انداز میں جواب دینا ہوگا
اس موقع پہ تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر راجہ فہیم کیانی نے کہا کہ میرے سامنے وہ لوگ ہیں جنہوں نے پاکستان بنا نے میں کردار ادا کیا !پ مسئلہ کشمیر کی قانونی حیثیت کو سمجھتے ہیں، مجھے لگتا ہے کہ کشمیری پاکستان سے محبت کی جنگ کررہے ہیں، 1947 میں ڈوگرہ فوج کیخلاف جو مزاحمت کی گئی تو کہا گیا کہ کیسے ایک  ٹرین فوج کےسامنے نہتے لوگ ٹھہریں گے،پھر دنیا نے دیکھا کہ نہتے لوگوں نے بھارتی فوج کو شکست دی، جس پہ بھارت اقوام متحدہ چلاگیا، بھارت نے جموں کے 4 لاکھ لوگو ں کی نسل کشی کی انہیں شہید کیا ،عالمی میڈیا اس پہ خاموش رہا ،یہ قربانی پاکستان کی محبت میں پیش کی گئی ،کشمیری پاکستانی جھنڈا کو سلام پیش کرتے اور لہراتے ہیں، خواتین نے اپنے جسم کٹوائے، الطاف بٹ  اور انکی فیملی نے بھارتی افواج کیخلاف لڑائی لڑی،10 ہزار خواتین کا ریپ کیا گیا،اسکے باوجود کشمیری جھکے اور نہ اپنے مطالبے سے پیچھے ہٹے،
،خواتین عصمت دری تو کروالیتی ہیں لیکن بھارتی افواج کو مجاہدین کی مخبری نہیں کرتیں، آسیہ اندرابی اور سید علی گیلانی موت کے منہ میں ہیں لیکن وہ اپنے موقف سے پیچھے نہیں ہٹے،فہیم کیانی نے کہا کہ مظاہروں سے تحریکوں کو جلاملتی ہے ،امن کے تمام راستے سرینگر سے جاتے ہیں، کشمیر کی آزادی کا راستہ واشنگٹن، لندن یا کہیں اور سے نہیں بلکہ اسلام آباد سے نکلتا ہے ،آج عزم و حوصلہ کی جنگ ہے ،کشمیر آج معیشت سے پہلے کمٹ منٹ مانگتے ہیں،
 لیڈر جب کمٹ منٹ دکھائے گا تو کراچی، لاہور میں لاکھوں لوگ نکلیں گے،بھارت سے برطانیہ اور دولت مشترکہ انسانی حقوق پوچھے گا،مقبوضہ کشمیر کے لوگ پاکستان سے مایوسی نہیں ہوئے،کشمیر ضرور آزاد ہوگا،آخر میں بار کے
وکلا نے دونوں رہنماوں سے کشمیر سے متعلق سوالات کئے۔آخر میں کراچی بار کی طرف سے مہمانوں کو سندھی اجرک اور ٹوپیاں پیش کی گئیں
Karachi : () Lawyers always participated in the Kashmir movement, Karachi gave shelter to Kashmiris, Kashmiris are fighting for the completion of Tehreek-e-Pakistan.
 Prominent Kashmiri Hurriyat Leader Altaf Ahmed Bhat and President Tehreek-e-Kashmir UK Raja Fahim Kayani expressed these views while addressing Kashmir Seminar here at Karachi Bar council, Karachi today.
 
On the occasion, President Karachi Bar Advocate Munir Malik, Joint Secretary Nadeem Mangi, Sardar Azeem, Advocate Sardar Saghir, Shafiq Butt, Aqeel Tareen, Naseer Abbasi Advocate, Naib Ameer Jamaat Islami Azad Kashmir Raja Jahangir were also present.
President Karachi Bar Munir Malik said that Pakistan mourns whenever Kashmir bleeds. Altaf Ahmed Bhat and Fahim Kayani did practical struggles for Kashmir cause, Bhat fought with Indian brutal forces,  and Fahim Kayani raised voice of besieged Kashmiris in UK and Europe through protests, demonstrations and Kashmir conferences at British Parliament.
 
He further said that, Karachi lawyers have always participated in the Tehreek-e-Kashmir, Karachi became the voice of Kashmiris, The Land of Sindh is that of hospitality, we called Kashmir Jugular vein, and we had a general body meeting on Kashmir Day, we passed a resolution, which was sent to the UN. We are organizing Kashmir Conventions nationwide, we cannot step back on Kashmir cause, Kashmir is a problem of Pakistan and all of us, Kashmiris should be given the right to self-determination, He added.
 
During his address, President Jammu Kashmir Salvation Movement, and Kashmiri Hurriyat Leader Altaf Ahmed Bhat said that The purpose of coming here is to raise awareness for Kashmir. If the lawyers of the country, including Karachi, become the voice of the besieged mothers, daughters, and sisters of occupied Kashmir, we will see revolutionary changes. I fought the Indian army myself, but only Jihad with the sword is not enough, we need to have strong diplomacy, to expose Indian state terrorism in diplomatic fronts of the world. Fahim Kayani groomed with the leadership of Kashmir, his heart feels the pain and melts for the oppressed Kashmiri people. The pain that has been felt by 18 months Hiba Han, Asiya Andrabi.
We fight for peace and justice. My demand is to raise the voice of besieged Mothers and sisters of Indian Occupied Jammu and Kashmir throughout the world, and we will strike every door of the International Organizations, & Parliaments till the freedom of Kashmir.
 
Indian lawyers and judges hanged Afzal Guru simply because he was considered by the Indian judge to be the voice of the Indian nation.
Pakistani lawyers should have raised voice for this atrocity.
 
I salute the Pakistani nation for Asiya Andrabi, Gilani, Mir Wazir Omar Farooq, Shabbir Shah, Yasin Malik and Zafar Akbar Bhat, that they fought a bigger power for Kashmir.
 
President JKSM Bhat asserted that The way we are making sacrifices, just as India is trying to suppress the movement, Likewise Pakistan has to work even harder for the freedom of Kashmir.
While the world comes to roads for protest in favour of Kashmir, but there is silence here, the momentum is stopped, Pakistan's statement should be in accordance with the statement of Quaid-e-Azam Muhammad Ali Jinnah. The world asks for the solution through dialogues, but despite hundreds of session of Talks, Kashmir issue persists. 
The main obstacle in resolving the Kashmir issue is India's deliberate tenaciousness. Which does not allow the implementation of the resolution presented by its signatures?
 
Bhat further said that, In Kashmir, Fathers, sons, daughters are killed, women are molested, and made half widows by abducting their husbands.
There is no example of bravery like Kashmiris in the world. From Karachi to Srinagar, we are one.
 
Altaf Ahmed Bhat addressing to the lawyers suggested that File a case in the International Court of Justice against Narendra Modi's atrocities, and extrajudicial killings of innocent Kashmir, call Modi in the court of the ICJ - prove him a terrorist of the world and held him responsible for a crime he did against humanity.
 
The eyes of Kashmir's mothers & sisters are at Pakistan after August 5, 2019, we are grateful that Pakistan is behind us. But Before August 5, India had occupied Pakistan's vein, now Modi has set foot on Pakistan's vein. Which is our claim that Kashmir is the backbone of Pakistan, it is also the survival of Pakistan. Bhat added,
The blood of 5 lac people of Kashmir is in the very foundations of Pakistan. It is a war of hatred and love. There are many steps to take before the war.
Is that happening? Are lawyers and businessman and people related to other fields are taking those steps?
 
We never believed in any article of India before, now after August August, Modi terminated all agreements. Now, after 5 August, Modi terminated all agreements,
Now, India is illegally, and oppressingly controlling Kashmir. Who are we waiting for, Kashmiris will never stay with India, if we do not rescue Kashmiris today, Kashmiris will be killed, if you do not rescue today, there will be a disaster, The war Pakistan will have to fight for waters tomorrow will be even more costly if we don't liberate Kashmir from India today.
If the Pakistan Army started mobilizing towards Kashmir today, every young, old, Men, Woman, and elderly will kick out Indian Army from Indian Occupied Jammu and Kashmir.
India has been full of war madness. We have to create awareness in the masses too - then the Kashmir issue will be solved and then the third party will be forced to mediate. 
In the world, especially in Europe, people like Fahim Kayani have made Kashmir a flashpoint, & this is the right way to respond to Modi's actions.
 
Speaking on the occasion, Raja Fahim Kayani, President Tehreek-e-Kashmir UK said taht, "I have people in front of me who have played a role in making Pakistan! You understand the legality of the Kashmir issue. I think Kashmiris are in love with Pakistan and they are fighting the Freedom war for the love of Pakistan." 
 
In 1947, the resistance against the Dogra army was considered little, but that resistance defeated Indian forces, and India moved to the United Nations. 
India massacred 4 lakh, people of Jammu, The world media remains silent, but those sacrifices were offered in love of Pakistan.
Kashmiris salute and wave Pakistani flags, women's bodies are cut 10,000 women were raped. Altaf Ahmed Bhat's family fought against Indian brutal forces, but still, Kashmiris did not bow down or withdraw from their demand for freedom.
 
President Tek Raja Fahim Kayani while saluting and praising the valour of Kashmiri women said that, The brave and courageous Kashmiri women are raped, but never reported Freedom Fighter Mujahideen to Indian forces.
Fahim Kayani said that the protests ignite the movement, all the paths to peace go from Srinagar, Kashmir's liberation route does not come from Washington, London or anywhere but Islamabad. Today is a war of determination, Kashmir.
 
"When the leaders show commitment, millions of people will come out in Karachi, Lahore, Islamabad, and India will be asked by UK, EU and commonwealth about the atrocities and persecution of besieged people of Indian occupied Jammu and Kashmir. "Kayani added.
 
Question Answer session followed at the end, bar lawyers asked questions from both the leaders about Kashmir. In the end, the Karachi Bar presented the Guests with Sindhi casings and hats.